--> Best Pardes Poetry in Urdu Text - Jo Ghar Se Door Hotay Hain - Urdu Poetry
Home Sad Poetry

Best Pardes Poetry in Urdu Text - Jo Ghar Se Door Hotay Hain

Beautiful Poetry / Urdu Nazm for people who live abroad. Anyone living far from his home can relate to these Pardes poetry lines. I hope you'll like it.

Best Pardes Poetry in Urdu Text - Jo Ghar Se Door Hotay Hain

جو گھر سے دُور ہوتے ہیں

بہت مجبُور ہوتے ہیں

کبھی باغوں میں سوتے ہیں

کبھی چھپ چھپ روتے ہیں

غیروں کو یاد کرتے ہیں

پھر فریاد کرتے ہیں

مگر جو بے سہارا ہوں

غیروں سے بے کنارا ہوں

اُنہیں گھر کون دیتا ہے

یہ خطرہ کون لیتا ہے

بڑی مشکل سے ایک کمرہ

جہاں کوئی نہ ہو رہتا

نگر سے پار ملتا ہے

بہت بیکار ملتا ہے

تو پھر دو تین ہم جیسے

ملتے ہیں سب پیاسے

اور آپس میں یہ کہتے ہیں

کہ مل جُل کر ہی رہتے ہیں

کوئی کھانا بنائے گا

کوئی جھاڑو لگائے گا

کوئی دھوئے گا سب کپڑے

تو رہ لیں گے بڑے سُکھ سے

مگر گرمی بھری راتیں

تپیش آلود سوغاتیں

اور اُوپر سے عجیب کمرہ

گُھٹن اور حبس کا پہرہ

تھکن سے چُور ہوتے ہیں

سکُون سے دُور ہوتے ہیں

بہت جی چاہتا ہے جب

کہ ماں کو بھیج دے یارب

جو اپنی گود میں لے کر

ہمیں ٹھنڈی ہوا دے کر

سلا دے نیند کچھ ایسی

کہ ٹوٹے پھر نہ ایک پل بھی

مگر کچھ بھی نہیں ہوتا

تو کر لیتے ہیں سمجھوتہ

کوئی دل میں بِلکتا ہے

کوئی پہروں سُلگتا ہے

جب اپنا کام کر کے ہم

پلٹتے ہیں تو آنکھیں نَم

مکان ویران ملتا ہے

بہت بے جان ملتا ہے

کوشش مدھوم ہوتی ہے

فضا مغموم رہتی ہے

بڑے رنجور کیوں نہ ہوں

بڑے مجبور کیوں نہ ہوں

اوائل میں مہینے کے

سب اپنے خون پسینے کے

جو پیسے جوڑ لیتے ہیں

گھروں کو بھیج دیتے ہیں

اور اپنے خط میں لکھتے ہیں

ہم اپنا دھیان رکھتے ہیں

بڑی خوبصورت گاڑیاں ہیں

ہر طرف خوشیاں ہی خوشیاں ہیں

ہم یہاں بہت خوش رہتے ہیں

جبھی تو واپس نہیں آتے ہیں

Also Read :

No comments:

Post a Comment

to Top